طالبان سربراہ کا حکام سے سرکاری نوکریوں سےاپنے بیٹوں کو فارغ کرنیکا حکم

0
179

افغانستان پر بزور بندوق قابض طالبان سربراہ ہیبت اللہ اخوندزادہ نے افغان حکام کو حکم دیا ہے کہ وہ اپنے اُن تمام رشتہ داروں کو برطرف کریں جنھیں انھوں نے سرکاری عہدوں پر رکھا ہوا ہے۔

ہیبت اللہ اخوندزادہ کے حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ اہلکار اپنے بیٹوں یا خاندان کے دیگر افراد کی جگہ دوسرے افراد کی تقرری کریں اور مستقبل میں رشتہ داروں کو ملازمت دینے سے گریز کریں۔

طالبان نے 2021 میں اقتدار سنبھالتے ہی کچھ سینیئر عملے کو برطرف کر دیا تھا، جبکہ دیگر فرار ہو گئے تھے۔

ایسے الزامات سامنے آئے ہیں کہ ناتجربہ کار عملے کو ان ذاتی تعلقات کی بنیاد پر رکھا گیا ہے۔

پشاور، پاکستان میں واقع افغان اسلامک پریس نے رپورٹ کیا کہ یہ حکم نامہ ان الزامات کے بعد جاری کیا گیا ہے کہ طالبان کے کئی سینئر عہدیداروں نے اپنے بیٹوں کو حکومت کے اندر کام کرنے کے لیے مقرر کیا تھا۔

حکم نامے کی ایک تصویر سنیچر کے روز آفس آف ایڈمنسٹریٹو افیئرز کے ٹوئٹر پیج پر پوسٹ کی گئی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here