اسلام آباد مارچ میں شامل افراد کو بلیک میل وگمشدہ کیا جارہا ہے، ڈاکٹر ماہ رنگ

0
40

بلوچ یکجہتی کمیٹی کی رہنما ڈاکٹر ماہ رنگ بلوچ نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ایکس پر اپنے ایک پوسٹ میں کہا ہے کہ بدقسمتی سے بلوچستان میں قتل و غارت کا یہ سلسلہ بدستور جاری ہے جس میں مزید لوگوں کو زبردستی لاپتہ کیا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جب سے ہمارا احتجاج 23 نومبر کو شروع ہوا ہے، درجنوں لاپتہ ہو چکے ہیں، اور دسمبر اور جنوری میں اسلام آباد تک ہمارے مارچ کے دوران ہمارے ساتھ شامل ہونے والوں کو اغوا، بلیک میل، دبائواور زبردستی کیا جا رہا ہے۔ 7 فروری 2024 کو لاپتہ ہونے والے مظاہرین میں شامل ہیں، گلخان شکاری، میران شکاری اور زاہد ولد اختر محمد۔ اس کے علاوہ، 2 فروری کو مستونگ سے ایک نوجوان کو زبردستی لاپتہ کر دیا گیا۔

ان کہا مزید کہنا تھا کہ بدقسمتی سے ان قتل و غارت گری کی خبریں خاموشی سے دفن ہیں۔ کسی کو گرفتار یا قانونی طور پر مقدمہ نہیں چلایا گیا ہے۔ اس کے بجائے، افراد کو زبردستی غائب کر دیا جاتا ہے اور پھر جعلی مقابلوں میں مار دیا جاتا ہے۔ انتخابات کے بعد پاکستان کے سیاست دانوں میں اقتدار کی کشمکش کے درمیان وہ مرنے والوں اور لاپتہ افراد کے اہل خانہ کی حالت زار سے لاتعلق رہتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here